urdu town

پاکستان کے سب سے بڑے صوبے پنجاب میں بھی صوبائی حکومت نے منگل سے دو ہفتے کے لیے لاک ڈاؤن کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

یہ فیصلہ پیر کو کابینہ کی کمیٹی کے اجلاس میں کیا گیا۔

وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے اجلاس کے بعد پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے لاک ڈاؤن کا اعلان کیا۔

پنجاب میں اس وقت کورونا کے 225 مصدقہ مریض موجود ہیں جن میں سے اکثریت ڈیرہ غازی خان میں بنائے گئے قرنطینہ میں رکھے گئے زائرین ہیں جن کی تعداد 175 ہے۔

اس کے علاوہ لاہور میں 34 افراد میں وائرس کی تصدیق ہوئی ہے جبکہ گجرات اور گوجرانوالہ میں چار چار، جہلم میں تین، راولپنڈی اور ملتان میں دو، دو جبکہ سرگودھا میں ایک مریض موجود ہے۔

محکمۂ صحت کے مطابق لاہور سے ایک مریض کو ملتان اور ایک کو سرگودھا منتقل کیا گیا ہے اور مصدقہ مریضوں کو دیگر افراد سے الگ آئسولیشن وارڈز میں رکھا گیا ہے۔

خیال رہے کہ پنجاب میں تحریکِ انصاف کی ہی حکومت ہے جس کے سربراہ اور ملک کے وزیراعظم عمران خان کہتے رہے ہیں کہ پاکستان لاک ڈاؤن کا متحمل نہیں ہو سکتا اور وہ ملک لاک ڈاؤن نہیں کریں گے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here